Home / Misc.

Category Archives: Misc.

Feed Subscription

Your inability cannot see my ability, punch-line of the fashion showcase by Nauman Arfeen at Fashion Pakistan Week – Spring Summer Edition 2018.

Karachi, March 12: Special children are precious and one of us! They can do wonders for our country as a nation. If only they are given a proper platform to exhibit their capabilities and talent.

This was the message in one of the showcase in the second and final day of the Fashion Pakistan Week (FPW) which displayed the creations of our nation’s noted fashion designer, Nauman Arfeen.

The gem of the day was the impressive walk of the special Olympians who walked for Nauman Arfeen, flaunting their medals and winning applause of the overwhelmed audience for these unsung heroes of Pakistan.

This brave display of courage and dedication stressed the need to give the required platform to the special Olympians at governmental level.

The show was made a big success due to the cooperation, leadership and dedication of Ronak Lakhani, chairperson Special Olympics Pakistan whose great role made it all possible and to highlight the achievements of our nation’s pride, the special child Olympians.

About Special Olympics

Special Olympics is the world’s largest sports organization for children and adults with intellectual disabilities, providing year-round training and competitions to athletes and Unified Sports partners in nearly 172 countries. Their headquarters in Karachi, Pakistan is chaired by Ms. Ronak Lakhani who is awarded with the Sitara-e-Imtiaz in recognition of her selfless services to differently-abled persons.

About Nauman Arfeen

Nauman Arfeen is a name famous for his fashion designing skills. He caters all genders and all ages. His exquisite, unique and intricate designs are not only recognized in Pakistan but also all across the globe. His turbans are traditionally hand wrapped and the crowning glory of his brand. A groom is incomplete without his sherwani. Women swear is blooming with time and his attires are to drool over. Even the kids are dressed to perfection by Nauman Arfeen.

Read More »

LCCI chief for ground-reality based reforms

Lahore, April 11, 2018 (PPI-OT): Taxation system needs reforms based on ground realities and due consultation process with the stakeholders to ensure result-oriented policies for the businessmen. Harmonization in tax system across the country is also a must to get rid of the issue of dual taxation. In a statement, the LCCI President Malik Tahir Javaid said that though amnesty scheme is good step to bring out-of-country capital into the country but these cannot be productive until and unless major issues like “withholding tax on banking transactions” exists.

He said that over the years FBR could not satisfy all its stake holders i.e. the State as well as tax payers with 1.2 million filers out of total population of 210 million fetching hardly revenue collection of 12 to 13% of the GDP and unhappy stakeholders across the board, speaks of FBR’s failure so far. It is further repeated from the international ranking of paying taxes, which is at present 172 out of 190 countries of world which indicates very unhappy situation.

The LCCI President said that neither the existing system is economically neutral, taxpayer friendly, equitable, progressive nor facilitative and supportive to generate healthy business activities for all. Taxation is of course important source of revenue collection but tax policies must be based on the best international practices and universally accepted canons of taxation.

He said that it is a matter of serious concern that with the existing narrow tax-base, the policy makers instead of revolutionize the tax policy options, seems defendant on the burdening of the existing taxpayers whether corporate, (LSE and SME) salaried, individuals and certain other documented sectors of the economy. He said that repetition of such policy option coupled with unbridled withholding tax regime, tariff structures leading to protectionism and creating hurdles to make in “Pakistan’s Agenda”, to promote the domestic industry is perhaps the major obstructing and responsible factor for all difficulties be faced on economic front at present.

LCCI President was of the view that various distortion in the existing tax policies can be removed if the feedback of all the representatives of business organizations is given due consideration by the FBR authorities. It is universally admitted fact that public policy makers can make noticeable difference by linking their mind-set to ground realities.

He said that section 38-B of Sales Tax Act, 1990 is being adversely used by the officials of tax department. They are paying illegal visits to markets and godowns to unjustifiably harass the business people. They not only take coercive measures to raise unlawful tax demands without providing any supporting document but also carry all the available records with them. We are of the view that teams from tax department should visit the markets, if indispensable, but they should be bound to follow due legal process and immediately stop harassing business community. He said that FBR may convene a meeting to be attended by all the Chambers of Commerce, prominent representatives’ bodies, Associations and may lay down uniform and transparent policy guidelines for the field formation.

“Unjust and encroaching mind-set of field formations has drawn the confidence level between the FBR officials and the Taxpayers at the lowest level. Illegal taxation coupled with illegal recovery though bank account attachment is genuinely harassing and creating hardship for the business community. Recovery through attachment of accounts should not be allowed at all, unless the taxpayer has availed facility of stay of demand at LIT (Appeal) and ITAT level. It is pertinent to mention here that finances of business people in their bank accounts help sustain their business while when they are withdrawn by the department, it tantamount to sudden business death”, the LCCI President added.

While calling for reduction in Number and Frequency of Taxes, the LCCI Senior Vice President Khawaja Khawar Rashid said it is a hard fact that number of taxes and frequency of paying taxes must be reduced. Moreover, taxes may be paid quarterly instead of every month. For that matter, all para-tariffs must be merged in the main tariffs. Similarly, there should be electronic communication between taxpayers and tax departments. These proposals can make noticeable difference and win the confidence of taxpayers.

For more information, contact:
Information Department
Lahore Chamber of Commerce and Industry (LCCI)
11-Shahrah-e-Aiwan-e-Tijarat,
Lahore -54000, Pakistan
Tel: +92-42-111-222-499
Fax: +92-42-36368854
Website: www.lcci.org.pk

Read More »

کیروئی پٹرولیم نے برازیل میں سب سے بڑا یو پی جی این منصوبہ حاصل کرلیا

بیجنگ، 9 اپریل 2018ء/پی آرنیوزوائر/– چند روز قبل شانڈونگ کیروئی پٹرولیم ایکوئپمنٹ لمیٹڈ (جسے آگے “کیروئی پٹرولیم” لکھا جائے گا) کی زیر قیادت ایس پی ای نے برازیلین پٹرولیم کارپوریشن (جسے یہاں پٹروبراس لکھا جائے گا) کے ساتھ ریاست ریو کے شہر اتابورائی میں گیس پروسیسنگ پلانٹ کے لیے 600 ملین امریکی ڈالرز کے (یو پی جی این) منصوبے پر دستخط کردیے۔ یہ 2014ء کے بعد پیٹروبراس کا پہلا عوامی نیلامی تیل منصوبہ اور برازیل میں قدرتی گیس کو صاف کرنے کا اب تک کا سب سے بڑا منصوبہ ہے۔ یہ پیٹروبراس پری-سالٹ کے لیے تیل و گیس میں پیشرفت میں بہت اہمیت رکھتا ہے۔ کیروئی پیٹرولیم تیل کی انجینیئرنگ کے شعبے میں پیٹروبراس کا کوئی منصوبہ حاصل کرنے والا چین کا پہلا اور واحد نجی ادارہ بن چکا ہے۔ اس نے چینی اداروں کے لیے ایک مثال قائم کردی ہے کہ جس کی پیروی کرتے ہوئے وہ سمندر پار جائیں اور چین کی نمائندگی کرتے ہوئے علم و تجربے کا سنہرا کارڈ تخلیق کریں۔

برازیل کے لیے چینی سفیر لی جنچانگ نے کہا کہ “ہم برازیل اتابورائی نیچرل گیس ٹریٹمنٹ پلانٹ (یو پی جی این) منصوبے کے لیے کامیاب بولی پر کیروئی پٹرولیم کو گرمجوشی سے مبارک باد دیتے ہیں، جو کیروئی کے بلند حوصلوں اور برازیل میں زبردست کوششوں کا اظہار کرتا ہے اور برازیل میں چین کے داخلے کی اہم کامیابیوں کی نمائندگی کرتا ہے۔ ہمیں امید ہے کہ کیروئی اپنے درجہ اول کے ڈیزائن اور تعمیرات کے ذریعے مقامی معاشی و سماجی ترقی کو آسان بنا کر پٹرولیم چین-برازیل تیل و گیس تعاون کے منصوبوں کے لیے ایک معیار مرتب کرے گا۔

برازیلی انجینیئرنگ کمپنی میتودو پوتینشل نے مقامی مارکیٹ کی ترقی کو ترویج دینے اور منصوبوں کو سہارا دینے کے لیے پیٹروبراس کے لیے گزشتہ تین دہائیوں میں تقریباً ایک سو منصوبے کامیابی سے فراہم کیے ہیں۔ اس نے کیروئی پٹرولیم کے ساتھ ایک مشترکہ منصوبہ تشکیل دیا ہے جو اس منصوبے میں کلیدی کردار ادا کرتا ہے۔ پیٹروبراس کے منصوبے پر بولی لگانے کی دستاویزات باضابطہ طور پر ملنے کے بعد، جنوری 2017ء سے کیروئی بہترین تجویز نامہ تیار کرنے کے لیے 9 مہینے تیاری کرتا رہا۔ بالآخر کیروئی پٹرولیم ماڈیولر اور معیاری ڈیزائن کے مختلف فائدوں، کم عملیاتی اخراجات اور منصوبے سے کمانے کے بہتر طریقوں کے ساتھ دنیا بھر کے معروف انجینیئرنگ اداروں میں نمایاں رہا۔

قدرتی گیس صاف کرنے کا منصوبہ، جو کیروئی نے حاصل کیا، برازیل میں قدرتی گیس صاف کرنے کا سب سے بڑا کارخانہ ہوگا۔ یہ ریو کی ریاستی حکومت کو 2,000 سے زیادہ مقامی ملازمتیں فراہم کرکے بے روزگاری کے مسئلے سے نمٹنے میں مدد دے گا۔ یہ کارخانہ بنیادی طور پر سانتوس طاس میں پری-سالٹ تیل کو بنانے کے عمل میں متعلقہ گیس کی پیداوار کا کام کرتا ہے، جو برازیل میں پری-سالٹ تیل کی عام پیداوار کی مضبوط ضمانت فراہم کرتا ہے اور پری-سالٹ تیل میں اضافے اور بڑھتی ہوئی پیداوار میں بہت اہمیت رکھتا ہے۔ کارخانے کی تکمیل قدرتی گیس کی نقل و حمل اور پروسیسنگ کو 23 ملین مکعب میٹر سے 44 ملین مکعب میٹر روزانہ تک بڑھا چکی ہے۔ مزید برآں پروسیس شدہ قدرتی گیس گاڑیوں کے لیے اور صنعتی شعبے میں استعمال ہوگی، جو برازیل کی حکومت پر سے قدرتی گیس درآمد کرنے کے دباؤ کو کم کرے گی۔

کیروئی پٹرولیم نے اپنی کوششوں کے ذریعے چین اور برازیل کے درمیان دوستی کو فروغ دیا اور ایک مستحکم چینی ادارے کی قدری زنجیر کو دنیا کے لیے پھیلا دیا ہے۔ یہ تیل و گیس کے شعبے میں بیرون ملک جانے والی صنعتوں کا نمائندہ ہے جو بیرون ملک جا رہا ہے، خطرے مول لے رہا ہے، شفاف کردار ادا کر رہا ہے اور امریکی براعظم پر چین کی مثبت ساکھ قائم کر رہا ہے۔

Read More »

ڈریگن بوٹ چیمپیئن شپ نے بین الاقوامی نگاہیں چین کی سرفہرست جامعہ کی طرف کردیں

ہانگچو، چین، 9 اپریل 2018ء/سنہوا-ایشیانیٹ/– دنیا کے مؤقر ترین اعلیٰ تعلیمی اداروں سے تعلق رکھے والے طلبہ اوّلین بین الاقوامی ایلیٹ یونیورسٹی ڈریگن بوٹ چیمپیئن شپس کے لیے چین کے جنوب مشرقی چیجیانگ صوبے کے شہر ہانگچو میں آئے۔ اس مقابلے نے، جو چیجیانگ یونیورسٹی کے زیر انتظام تھا، 15 ٹیموں کا معائنہ کیا – بشمول آکسفرڈ، ہارورڈ، اسٹینفرڈ اور میساچوسٹس انسٹیٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کے – جو 27 مارچ کو ہانگچو کی جنشا جھیل میں روایتی چینی کشتی رانی کے مقابلے کے لیے جمع ہوئیں۔

The picture shows the site of the first International Elite University Dragon Boat Championship organized by Zhejiang University.

ڈائریکٹر دفتر بین الاقوامی تعلقات لی من نے وضاحت کی کہ “ڈریگن بوٹ چیمپیئن شپس ظاہری اعتبار سے ہمارے لیے بہت اچھی ہیں۔ اور بین الاقوامی تعلقات کے حوالے سے ہم کھیل کے ذریعے ایک دوسرے کو بہتر انداز میں جان سکتے اور رابطے کر سکتے ہیں۔”

جامعہ دنیا بھر میں 180 شراکت داروں کے ساتھ ہر سال 3,000 طلبہ کو بیرون ملک پڑھنے کے لیے بھیجتی ہے اور 6،000 بین الاقوامی طلبہ کا ایک دستہ رکھتی ہے۔ مختلف منصوبوں کے ذریعے جامعہ، جو مستقل چین کی بہترین جامعات میں جگہ رکھتی ہے، امید کرتی ہے کہ اپنی بین الاقوامی ساکھ کو مزید بہتر بنائے گی۔

سابق ییل میڈیکل اسکول پروفیسر اینا وانگ رو کے مطابق یہ باہمی تعاون کا جذبہ تھا جس نے انہیں 1897ء میں بننے والی اس جامعہ میں انسٹیٹیوٹ آف نیوروسائنس اینڈ ٹیکنالوجی قائم کرنے پر قائل کیا۔

“میں نے چین میں مختلف جامعات دیکھیں لیکن چیجیانگ سے مجھے محبت ہوگئی کیونکہ انجینیئرنگ اور طب میں یہ مضبوط ہے، مستحکم ملحقہ ہسپتال رکھتی ہے اور یہاں طلبہ کا معیار بہت اچھا ہے۔” رو نے کہا۔

جامعہ امید کرتی ہے کہ اس قسم کی انقلابی تحقیق، بین الاقوامی شراکت داریوں کی کثرت اور جدید تنصیبات غیر ملکیوں کو اس کے نئے بین الاقوامی کیمپس کی جانب کھینچیں گی۔ “مشرق و مغرب کے تعلیمی فلسفوں کا ملاپ” کہا جانے والا یہ کیمپس پہلی بار 2016ء میں کھولا گیا تھا تاکہ طلبہ کی موجودہ آبادی میں 4,000 کا ممکنہ اضافہ کیا جا سکے۔” ہی لیانچین، ڈین ہائنانگ انٹرنیشنل کیمپس نے کہا۔

پیش کردہ کورسز میں سے دو مشترکہ انڈر گریجویٹ ڈگریاں ہیں، جن میں سے ایک اسکاٹ لینڈ کی یونیورسٹی آف ایڈنبرا میں بایومیڈیکل سائنسز کے ساتھ ہے اور دوسری امریکا کی یو آئی یو سی کے ساتھ انجینیئرنگ کے ساتھ۔ دونوں جامعات کے اساتذہ کی زیر تربیت چار سال کی تعلیم کے بعد طلبہ کو دوہری سند ملے گی۔

جنشا جھیل کے کنارے پر 20 سالہ ایم آئی ٹی کے کیمسٹری طالب علم ڈارنیل گرین بیری کہتے ہیں کہ وہ شہر اور جامعہ دونوں سے متاثر ہوئے ہیں۔ اس سوال پر کہ اگر وہ بوسٹن میں تعلیم حاصل نہ کریں تو کیا چیجیانگ کو ترجیح دیں گے، انہوں نے کہا کہ “اگر وہ ایسا کر سکے تو ضرور کریں گے۔”

ذریعہ: چیجیانگ یونیورسٹی

امیج اٹیچمینٹس کے روابط:
http://asianetnews.net/view-attachment?attach-id=309833

Read More »

KCCI’s to remain open till 5:00PM on Friday for membership renewal only

Karachi, March 28, 2018 (PPI-OT): The Karachi Chamber of Commerce and Industry (KCCI), in a statement issued, informed all its members that KCCI’s Membership Department will remain operational on Friday, March 30, 2018 till 5:00PM for membership renewal. The Membership Department will remain operational on Friday from 9:00AM to 12:30PM and after Namaz-e-Jumma, the process of membership renewal will resume from 2:30PM to 5:00PM.

Karachi Chamber is currently renewing membership for the year 2018-19 and as per Trade Organizations Act 2013, the last date for renewal of membership is 31st March 2018 (Saturday). KCCI has already intimated members through letters, emails and SMS service that the membership of Karachi Chamber shall expire on 31-03-2018 and all members have been advised to get their membership renewed on or before the last date.

In case an existing member could not get the membership renewed on or before 31st March 2018, his/her membership shall cease automatically and to become KCCI member again, they will have to go through the entire re-admission process.

For more information, contact:
Director Press/Electronic Media and Public Relations
Karachi Chamber of Commerce and Industry (KCCI)
Aiwan-e-Tijarat Road, Off Shahrah-e-Liaquat,
Karachi-74000
Phone: +92-21-99218001-09
Fax: +92-21-99218040
Email: info@kcci.com.pk, secretary@kcci.com.pk
Website: www.kcci.com.pk

Read More »

‫جاپان کا سب سے بڑا پارچہ بافی و ملبوسات او ای ایم اور او ڈیم میلہ اے ایف ایف اوساکا 2018ء اپریل میں منعقد ہوگا

اوساکا، جاپان، 19 مارچ 2018ء/پی آرنیوزوائر/– 2003ء میں شروع ہونے والا ششماہی ایونٹ دی ایشیا فیشن فیئر (اے ایف ایف) ہر سال بہار میں اوساکا اور خزاں میں ٹوکیو میں ہوتا ہے۔ اے ایف ایف پارچہ بافی اور ملبوسات کی صنعت میں اصل سازوسامان تیار کرنے والوں (او ای ایمز) اور اصل ڈیزائن بنانے والوں (او ڈی ایمز) کے لیے جاپان کے سب سے بڑے ایونٹ کی حیثیت سے چین سے 3,000 سے زیادہ نمائش کنندگان اور گزشتہ 15 سالوں میں 100,000 سے زائد خریداروں کو ایک ساتھ جمع کرچکاہے۔ یہ نمائش دنیا بھر میں صنعت کے اہم کرداروں کی جانب سے بڑے پیمانے پر تسلیم شدہ اور سراہی گئی ہے۔

اے ایف ایف اوساکا 2018ء 10 سے 12 اپریل 2018ء تک مایوڈوم، اوساکا میں ہوگی۔ 365 بوتھس کے لیے کافی جگہ کے ساتھ اس میلے میں 323 نمائش کنندگان شرکت کریں گے، جن میں 258 فوری تیار سامان بنانے والے، 27 فیشن لوازمات کے ادارے، 20 کپڑے فراہم کرنے والے، 14 گھریلو پارچہ جات بنانے والے، 3 مددگار مواد بنانے والے اور ایک نمونہ جات فراہم کرنے والے ہوں گے، کئی نمائش کنندگان بنگلہ دیش، کمبوڈیا، چین، جاپان، لاؤس، میانمر، پاکستان، امریکا اور ویت نام سمیت دیگر ممالک اور خطوں سے ہیں۔

نمائش کنندگان کو اُن کی مہارت کے اعتبار سے مختلف زونز میں یکجا کیا جائے گا، جیسا کہ بُنائی، جھالروں، جنوب مشرقی ایشیائی کارخانے، پارچہ جات اور مددگار مواد، گھریلو پارچہ بافی، او ڈی ایمز، پوستین، زیر چامے، بچوں کے ملبوسات ساتھ ساتھ فیشن لوازمات کے لیے زونز۔ نمائش کنندگان کی اکثریت جاپان کے ساتھ طویل المیعاد تجارتی تعلقات رکھتی ہے اور او ای ایم، او ڈی ایم، معیار، محدود تعداد اور کم لاگت کے لحاظ سے طلب کو پورا کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

مزید برآں، اے ایف ایف ٹوکیو 2018ء، میلے کا خزاں ایڈیشن، 26 سے 28 ستمبر 2018ء تک ٹوکیو میں سن شائن سٹی کے 12,500 مربع میٹر نمائشی علاقے میں ہوگا۔ ٹوکیو ایونٹ میں ایک نیا گھریلو ٹیکسٹائل زون ہوگا۔

ایونٹ کے بارے میں مزید معلومات اور نمائش کنندہ کی حیثیت سے شرکت کے حوالے سے مزید معلومات کے لیے میلے کی باضابطہ ویب سائٹ دیکھیں: www.asiafashionfair.jp۔

جناب یوچین ہوانگ
86-10-6528-5310+
info@asiafashionfair.jp

Read More »
Scroll To Top