Home / Press Release / ریاض میں منعقدہ فورم میں کووڈ 19 کی وجہ سے سعودی لیبر مارکیٹ کو درپیش چیلنجز کا جائزہ لیا گیا

ریاض میں منعقدہ فورم میں کووڈ 19 کی وجہ سے سعودی لیبر مارکیٹ کو درپیش چیلنجز کا جائزہ لیا گیا

ریاض، سعودی عرب، 8 دسمبر 2021 /پی آر نیوز وائر/ — سوشل ڈائیلاگ فورم کا گیارہویں ورژن، جس کا عنوان “کورونا وبا کی روشنی میں لیبر مارکیٹ – اثرات اور حل” ہے، سعودی دارالحکومت ریاض میں شروع کیا گیا ہے جس میں سعودی عرب میں انسانی وسائل اور سماجی ترقی کے وزیر، انجینئر احمد بن سلیمان الراجہی نے شرکت کی۔  فورم میں بین الاقوامی لیبر آرگنائزیشن کے اعلیٰ سطحی نمائندوں کے علاوہ دیگر معزز عہدیدار بھی اکٹھا ہوئے۔

محترم وزیر احمد الراجہی نے سعودی حکومت کی جانب سے فراہم کی جانے والی عظیم معاونت کی تعریف کی جس سے لیبر مارکیٹ میں قابل ذکر توازن حاصل کرنے، مزدوروں کی ملازمتوں کے تحفظ اور وبائی امراض سے متاثرہ تنظیموں بشمول نجی اور غیر منافع بخش تنظیموں کی مدد کرنے میں مدد ملی۔ وزیر نے وباکے دوران کاروباری ترقی اور شہریوں کے تحفظ کے لئے وزارت کی جانب سے شروع کئے گئے اقدامات اور حل پر بات چیت کی۔

سعودی عرب میں انسانی وسائل اور سماجی ترقی کے نائب وزیر جناب ڈاکٹر عبداللہ ابوتھنین نے کہاکہ “انسانی صحت کے بارے میں اپنی ذمہ داری اور تشویش کی عکاسی کرتے ہوئے مملکت نے شہریوں کی صحت کی دیکھ بھال، رہائش پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے ایک قدم اٹھایا ہے۔  قانونی حیثیت سے قطع نظر ہوکر صحت کی خدمات کے بجٹ کو ایس آر 47 ارب تک بڑھایا ہے۔ مملکت کی معاشیات پر وبا  کے اثرات کو کم کرنے کے مقصد سے حکومت نے مختلف اقدامات اور معاشی محرکات کے اقدامات حاصل کیے جن میں معاونت، استثنیٰ اور نجی شعبے کے واجبات کی ادائیگی میں تیزی لانا، نجی شعبے کے متاثرہ شہریوں کو 60 فیصد تنخواہوں کی پیشکش کرنا، کاروباری مالکان کو واجب الادا ویلیو ایڈڈ ٹیکسوں کی ادائیگی 3 ماہ کے لئے ملتوی کرنے کے ساتھ ساتھ ایس ایم ایز کو سپورٹ پیکجز فراہم کرنا شامل ہیں۔ وزارت خزانہ نے وبا  سے نمٹنے کے لئے فراہم کردہ مجموعی اقتصادی امدادی پیکجز کا تخمینہ ایس 177 ارب لگایا ہے۔

سماجی مکالمے کے ذریعے وزارت ایک باہمی وژن تشکیل دینے اور لیبر مارکیٹ کے معاملات پر عملی اور قابل اطلاق فیصلوں کو پورا کرنے کے لئے بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ میکانزم کو مضبوط بنانے کی کوشش کرتی ہے جو سماجی مکالمے اور سہ فریقی (حکومت، آجروں اور مزدوروں) کی خدمت کر سکتے ہیں اور 3 پیداواری فریقوں کے درمیان موثر تعاون کے تسلسل کو بڑھا سکتا ہے۔

تصویر: https://mma.prnewswire.com/media/1705697/1.jpg

Comments are closed.

Scroll To Top