Home / General / آئی بی ایس ایس ایشیا بحر الکاہل معیشتوں پر مذاکرے کی قیادت کرتا ہوا

آئی بی ایس ایس ایشیا بحر الکاہل معیشتوں پر مذاکرے کی قیادت کرتا ہوا

سوچو، چین، 12 مئی 2014 / پی آر نیوز وائر / — انٹرنیشنل بزنس اسکول سوچو (IBSS) نے سیان جیاؤتونگ-لیورپول یونیورسٹی (XJTLU) میں ایشیا و بحر الکاہل کی اقتصادیات پر جاری اپنے دوسرے سالانہ بین الاقوامی سیمینار کو 9 اور 10 مئی مکمل کرلیا۔

آئی بی ایس ایس کی ڈین پروفیسر سارا ڈکسن نے سب کو ایکس جے ٹی ایل یو میں خوش آمدید کہا اور تمام مہمانوں کو جامعہ اور اس کے منفرد بزنس اسکول کے پس منظر سے متعلق بتایا۔ پروفیسر ڈکسن نے بتایا کہ “اگرچہ  ہم ایک نئے تعلیمی ادارے ہیں لیکن ہم ایک نئی تاریخ رقم کرنے کا آغازکر رہے ہیں : اقتصادی تاریخ۔ یہ سیمینارز اور ورکشاپس ہماری تحقیقی صلاحیتوں کو مضبوط کرنے میں مدد کریں گے اور اس سے ہمیں دنیا کے بہترین بزنس اسکولوں میں سے ایک بننے اور اپنی تعلیم، تحقیق اور کاروباری سرگرمیوں کے ذریعے معاشرے میں کردار ادا کرنے کے مقصد میں معاونت ملے گی”۔

بعد ازاں آئی بی  ایس ایس میں اکنامکس گروپ کے سربراہ ڈاکٹر نمیش سالائیک  نے  مہمانوں کو ایشیا – بحر الکاہل خطے پر اثر انداز ہونے والے بنیادی اقتصادی امور   مثلاً مالیاتی پالیسی ، نظریاتی نمونہ سازی، تجارت   و بالواسطہ غیر ملکی سرمایہ کاری  اور سماجی بہبود پر گفتگو کرنے کی دعوت دی۔

پہلے روز گیارہ سے زائد اکیڈمک پیپرز پیش کیے گئے جس میں برطانیہ میں قائم یونیورسٹی آف لیورپول (UoL) اور یونیورسٹی آف شیفیلڈ،  نیشنل یونیورسٹی آف سنگاپور، چائنیز اکیڈمی آف سوشل سائنسز اور چین میں قائم ساؤتھ ویسٹرن یونیورسٹی آف فنانس اینڈ اکنامکس شامل ہیں۔

دوسرے  دن  کی شروعات خاص کر چینی نقطہ نظر  سے ایشیا بحر الکاہل اقتصادیات کے معاملات  پر گفتگو سے ہوئی اور  دیہی چین میں باہمی تعاون پر مبنی رویے سے   لے کر برطانیہ اور چین کے درمیان جدید ماحولیاتی نظام اور صنعتی- تعلیمی  تعاون  کے درمیان تعلق   جیسے امور کا  احاطہ کیا گیا۔

آئی بی ایس ایس کے ایسوشی ایٹ پروفیسر رونالڈ شرام  نے بتایا کہ “ایشیا بحر الکاہل کمیونٹی میں تنازعات کے حوالے سے بہت خبریں ہیں۔ اس فورم میں ہم نے  ایشیا بحر الکاہل تعاون و انضمام  پر دنیا کے چند بڑے تعلیمی اسکالرز سے حقیقی وقت میں تجزیہ لیا کہ کیا ہو رہا ہے اور زمین پر کیا ہونے والا ہے۔”

ڈاکٹر سالائیک نے دوپہر کے سیشن کی سربراہی کی جس میں یونیورسٹی آف سوکوبا اور انٹرنیشنل کرسچن یونیورسٹی آف جاپان کے پروفیسرز کی انٹرنیشنل اسٹڈیز میں اقتصادیات پر گفتگو  شامل تھی جنہوں نے علاقائی تنازعات اور تجارت و سفارت کاری   پر مقالات پیش کیے۔

آئی بی ایس ایس کے ایسوشی ایٹ پروفیسر اور سیمینار کے شریک – منتظم ڈاکٹر پاؤلو ریگس  نے ایشیائی ترقیاتی بینک انسٹیٹیوٹ کے جاپان میں نمائندے پیٹر مورگن کے ہمراہ مالیاتی قوانین پر ایک تحقیق اور لوز ایورژن  کے مزید عملی ثبوت پر گفتگو کے ساتھ سیمینارز کا اختتام کیا۔

مزید جانیئے:

xjtlu.edu.cn/en/

 ہمیں فالو کریں:

facebook.com/xjtlu
weibo.com/xjtlu
twitter.com/xjtlu

 ذریعہ: سیان جیاؤتونگ-لیورپول یونیورسٹی

Leave a Reply

Scroll To Top